علیم خان

image description

تعارف

علیم خان


5 اکتوبر 1972 کو لاہور میں آنکھ کھولنے والے معروف بزنس مین کو مستقبل میں پنجاب کے وزیراعلیٰ کے طور پر دیکھا جارہا ہے۔ وہ پاکستان تحریک انصاف کے پنجاب ونگ میں کلیدی حیثیت رکھتے ہیں۔ جہانگیر ترین کی نااہلی کے بعد وہ عمران خان کے مزید قریب آگئے ہیں۔

اُن کا پورا نام عبدل علیم خان ہے۔والد کا نام عبدل علیم تھا۔اُنھوں نے 1992 میں گورنمنٹ کالج لاہور سے گریجویشن کیا۔ سیاست میں آنے سے قبل کاروباری دنیا میں اپنا سکہ جمایا۔پراپرٹی کے میدان میں خود کو منوایا۔ مشرف دور میں انھوں نے سیاست کے میدان میں قدم رکھا۔ 2003 میں وہ لاہور سے صوبائی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے اور اگلے پانچ سال اس حیثیت میں مصروف رہے۔ وہ اس دور میں صوبائی وزیر برائے انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی بھی رہے۔

2007 کے بعد وہ کچھ عرصے سیاست سے دُور رہے۔ 2012 میں پھر متحرک ہوگئے۔ تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی، جس نے لاہور جلسے کے بعد خود کو منوا لیا تھا۔ البتہ فوری الیکشن میں حصہ نہیں لیا۔

علیم خان کا ستارہ این اے 120 کے ضمنی الیکشن میں چمکا، جب وہ سابق اسپیکر قومی اسمبلی اور ن لیگ کے سینئر رہنما ایاز صادق کے خلاف میدان میں اترے۔ وہ ایک کانٹے دار مقابلہ تھا، ایاز صادق فقط د و ہزار ووٹوں کے فرق ہی سے علیم خان کو ہرا سکے۔

اس بار بھی وہ این اے 129سے ایاز صادق کے خلاف لاہور سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔ اس بار بھی کانٹے دار مقابلہ متوقع ہے۔ ساتھ ہی وہ صوبائی نشست پر بھی کھڑے ہوئے ہیں۔

ان پر کرپشن اور زمینوں پر قبضے کے الزامات بھی لگتے رہے ہیں۔