شیریں مزاری

image description

تعارف

شیریں مزاری


پاکستان تحریک انصاف کی مرکزی رہنما شیریں مزاری پاکستانی سیاست دان اور رکنِ قومی اسمبلی تھیں۔ رہنما تحریک انصاف نے پاکستان میں ابتدائی تعلیم حاصل کرنے کے بعد لندن اسکول آف اکنامکس سے گریجویٹ کیا، بعدازاں کولمبیا یونیورسٹی سے سیاسیات میں ڈکٹریٹ کی ڈگری بھی حاصل کی۔

شیری مزاری نے اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے بعد قائداعظم یونیورسٹی کے شعبہ اسٹریٹیجک اسٹڈیز میں بطور ایسوسی ایٹ پروفیسر ملازمت کی اور بعد میں شعبے کے سربراہ کی حیثیت سے خدمات انجام دیں اور سنہ 2002 حکومت پاکستان کے انسٹیٹوٹ آف اسٹرٹیجک اسٹڈیز کی سربراہ منتخب ہوگئی۔

رہنما پاکستان تحریک انصاف شیریں مزاری کو سنہ 2008 میں حکومت پاکستان نے انسٹیٹوٹ آف اسٹرٹیجک اسٹڈیز کے ڈائریکٹر جنرل کے عہدے سے فارغ کردیا، جبکہ سنہ 2009 میں آپ ریٹائرڈ ہونے والی تھیں۔

انسٹیٹوٹ آف اسٹرٹیجک اسٹڈیز سے نکالے جانے کے ایک برس بعد شیریں مزاری کو پاکستانی خبر رساں ادارے ’دی نیشن‘ نے بطور ایڈیٹر تعینات کیا، جبکہ ’وقت نیوز‘ ہفتہ وار شو کی اینکر پرسن بھی رہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کی خاتون رہنما کو امریکی صحافی پر سی آئی اے کے جاسوس ہونے کا الزام عائد کرنے پر شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا جاچکا ہے۔

شیریں مزاری سنہ 2008 میں عمران خان کے قافلے میں شامل شمولیت اختیار کی، اور سنہ 2009 میں پاکستان تحریک کی سیکریٹری اطلاعات اور ترجمان کے عہدے پر تعینات ہوئیں۔

شیریں مزاری نے سنہ 2009 میں ناگزیر وجوہات کی بنا پر پاکستان تحریک انصاف سے استعفیٰ دے دیا، جب وہ پی ٹی آئی کی نائب صدر اور خارجہ پالیسی کی انچارج تھیں۔

آپ نے سنہ 2013 میں دوبارہ پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی اور ملک کے عام انتخابات میں صوبہ پنجاب سے خواتین کی مخصوص نشت پر تحریک انصاف کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ کر پہلی مرتبہ رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئی۔