اسد عمر

image description

تعارف

وہ اسد عمر، جن کی گنتی کبھی پاکستان کے ممتاز بزنس ایگزیکٹو میں ہوتی تھی، آج پاکستان تحریک انصاف کی اقتصادی پالیسیوں میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں۔

1961 میں راولپنڈی میں پیدا ہونے والے اسد عمر کے والد غلام عمر فوج میں جنرل تھے۔ ایک بہن، چھ بھائیوں میں وہ سب سے چھوٹے ہیں۔ ریٹائرمینٹ کے بعد یہ خاندان کراچی اٹھ آیا۔ انھوں نے 1984 میں آئی بی اے سے گریجویشن کیا۔

کیریر کا آغاز کراچی کی ایک معروف کمپنی سے کیا، پھر کینیڈا کا رخ کیا۔کچھ برس ادھر گزرے، مگر جلد اکتا گئے اور وطن میں کام کرنے کی خواہش انھیں واپس لے آئی۔ادھر وہ اینگرو کارپوریشن کا حصہ بن گئے، جہاں انھیں صلاحیتوں کا کھل کر اظہار کا موقع ملا۔ 2004 میں وہ اس کے صدر اور سی او او ہوگئے۔ اس شعبے میں ان کی خدمات اور ان کی کاوشوں کے اعتراف میں 2009میں ستارہ امتیاز سے نوازا گیا۔

اسد عمرکا شمار اپنے میدان کے چوٹی کے افراد میں ہوتا تھا ۔ وہ سب سے زیادہ تنخواہ پانے والے سی او او تھے، مگر سیاست کا رخ کرنے کے بعد انھوں نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا اور پی ٹی آئی کا حصہ بن گئے۔

انھیں سینئر وائس پریذیڈنٹ کا عہدے دیا گیا۔2013انتخابات میں الیکشن مہم میں ان کا کلیدی کردار رہا۔وہ اسلام آباد سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے۔

ان کے بڑے بھائی ن لیگ کا حصہ ہیں اور اس وقت گورنر کے عہدے پر فائز ہیں۔اس بار بھی وہ این اے 54 سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔ تجزیہ کاروں کے مطابق پی ٹی آئی کی کامیابی کی صورت میں انھیں اہم قلم داں دپا جاسکتا ہے۔