حمزہ شہباز

image description

تعارف

حمزہ شہباز شریف


پیدائش اور تعلیم

محمد حمزہ شہباز شریف 6 ستمبر 1974 کو لاہور میں شہباز شریف اور بیگم نصرت شہباز کے ہاں پیدا ہوئے۔ 2012 میں ان کی شادی رابعہ خان سے ہوئی۔ گورنمنٹ کالج یونی ورسٹی سے تعلیم حاصل کی۔ وہ پیشے کے اعتبار سے بزنس مین ہیں۔ پنجاب کے پولٹری کنگ کہلائے جاتے ہیں، حمزہ نے خاندان کی جلا وطنی کے دور میں خاندانی کاروبار کو سنبھالا۔

حمزہ شہباز کاروبار کے علاوہ سیاست کے شعبے میں متحرک رہے ہیں۔ جون 2008 مئی 2018 تک قومی اسمبلی کے ممبر رہے۔ مبینہ طور پر ان کی تین بیویاں ہیں جن میں سے ایک عائشہ احد ملک بھی ہیں۔ عائشہ کا دعویٰ ہے کہ ان کی شادی 2010 میں ہوئی تاہم حمزہ شہباز نے اس سے انکار ہی کیا۔ حال ہی میں عدالت میں یہ مسئلہ باہمی طور پر تصفیے کے ذریعے حل کر لیا گیا ہے۔ حمزہ کی تیسری بیوی کا نام مہرالنساء ہے جن کا نام حالیہ کاغذاتِ نامزدگی میں بھی درج ہے۔

سیاسی زندگی

حمزہ شہباز کی سیاسی زندگی کا آغاز 1999 میں اس وقت ہوا جب جنرل (ر) پرویز مشرف نے جمہوری حکومت پر شب خون مارنے کے بعد ان کے والد شہباز شریف اور چچا نواز شریف کو جلا وطن کردیا۔ حمزہ شہباز کو ملک میں رہنے دیا گیا تاکہ وہ خاندانی کاروبار کی دیکھ بھال کرسکیں۔

انھوں نے 2008 کے عام انتخابات میں لاہور کے انتخابی حلقے پی پی 142 سے آزاد حیثیت میں پنجاب کی صوبائی اسمبلی کی سیٹ کے لیے الیکشن لڑا لیکن ناکام رہے، حمزہ نے صرف ایک سو گیارہ ووٹ حاصل کیے اور خواجہ سلمان رفیق کی سیٹ کھو دی۔ جون 2008 میں جب ضمنی انتخابات ہوئے تو حمزہ قومی اسمبلی کے حلقے 119 سے مسلم لیگ ن کے ٹکٹ پر کھڑے ہوئے تاہم وہ کسی مقابلے کے بغیر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوگئے۔

لاہور کے اسی حلقے این اے 119 سے وہ ایک بار پھر 2013 کے عام انتخابات میں پی ایم ایل ن کے ٹکٹ پر قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے۔ 2016 میں ان کے بارے میں کہا جارہا تھا کہ وہ غیر رسمی ڈپٹی وزیر اعظم اور ڈپٹی وزیر اعلیٰ پنجاب ہیں۔

اثاثے

حمزہ شہباز شریف اپنے والد شہباز شریف سے زیادہ دولت مند رہے ہیں۔ 2014 میں ان کے اثاثوں کی مالیت 250.46 ملین تھی۔ 2008 میں ان کے اثاثوں کی مالیت 583,191 روپے تھی، جو 2011 میں بڑھ کر 211,080,295 روپے ہوگئی تھی۔ 2018 میں اب ان کے اثاثوں کی مالیت 411 ملین روپے ہے۔