ڈاکٹر یاسمین راشد

image description

تعارف

ڈاکٹر یاسمین راشد کا تعلق ضلع چکوال کے گاؤں نرگھی سے ہے، وہ 21 ستمبر 1950ء کو پیدا ہوئیں ، انہوں نے ابتدائی تعلیم نیلہ میں حاصل کی، بعدازاں لاہور میں کنونینٹ جینسز اینڈ مرے میں زیرتعلیم رہیں۔سن 1972 میں ڈاکٹر یاسمین راشد کی شادی محمد راشد نبی ملک سے ہوئی۔

تعلیمی قابلیت

ڈاکٹر یاسمین نے ایف ایس سی لاہور کالج فار وویمن یونیورسٹی سے کیا،1978میں ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل کی۔ ڈاکٹر یاسمین راشد 1984میں مزید تعلیم حاصل کرنے کے لیے برطانیہ چلی گئیں، انھوں نے 1981ء میں کالج آف فزیشن اینڈ سرجن پاکستان سے ایم سی پی ایس کیا۔

پروفیشنل کیرئر

ڈاکٹر یاسمین راشد لاہور کے مشہور و معروف گائنالوجسٹ میں سے ایک ہیں ، وہ 2003ء سے 2010ء تک کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے جینالوجی ڈپارٹمنٹ اور فاطمہ جناح میڈیکل کالج اور راولپنڈی میڈیکل کالج میں بطور  پروفیسر کام کر چکی ہے  جبکہ سینٹرل پارک میڈیکل کالج میں بطور سربراہ جینیالوجی ڈپارٹمنٹ بھی رہ چکی  ہے۔

ڈاکٹر یاسمین راشد 1998ء سے 2000ء تک پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کی صدر اور2008ء سے 2010ء تک پی ایم اے لاہور کی صدر بھی رہیں  جبکہ پنجاب میں سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ میں بطور چیئرمین ٹاسک فورس ویمن ڈویلپمنٹ کی ذمہ داریاں بھی نبھا چکی ہیں۔

سیاسی کیرئیر

ڈاکٹر یاسمین راشد نے 2010 میں اپنے سسر ملک غلام نبی کے مشورے کے بعد تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی اور سرکاری ملازمت سے سبکدوش ہوتے ہی پی ٹی آئی کے پارٹی الیکشن میں حصہ لیا ۔الیکشن میں کامیابی کے بعد لاہور چیپٹر کی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئیں۔

ڈاکٹر یاسمین 2013ء کے انتخابات میں لاہور کے حلقہ این اے 120 سے نوازشریف کے مقابلے میں الیکشن لڑا لیکن کامیاب نہ ہوسکی  اور 52 ہزار 321 ووٹ حاصل کئے۔

جولائی 2017 میں پاناما کیس میں نواز شریف کی نااہلی کے بعد قومی اسمبلی کے حلقے این اے 120 کی سیٹ خالی ہوئی ، جس کے بعد این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں پاکستان تحریک انصاف نے ڈاکٹر یاسمین کو مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز کے مد مقابل کھڑا کیا

مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز مجموعی طور پر 61745 ووٹ لے کر پہلے جب کہ پی ٹی آئی کی ڈاکٹر یاسمین راشد 47099 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہی ہیں۔

انتخابات 2018 میں ڈاکٹر یاسمین این  اے 125 سے پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار ہیں ۔